مردانہ کمزوری :impotence in urdu

40 سال کی عمر کے بعد بھی فٹ اور صحت مند رہنے کے لیے مردوں کو ان 5 ڈائٹ ٹپس پر عمل کرنا چاہیے۔

اگر آپ 40 سال کی عمر کے بعد بھی چست اور صحت مند رہنا چاہتے ہیں تو ان اہم غذاؤں پر ضرور عمل کریں۔

جیسے جیسے آپ کی عمر ہوتی ہے، میٹابولزم سست ہوجاتا ہے۔ میٹابولزم کی رفتار میں کمی کے ساتھ، وزن میں اضافہ اور خاص طور پر پیٹ کی چربی میں اضافہ جیسی علامات سب سے پہلے ظاہر ہوتی ہیں۔ ماہرین کے مطابق عمر کے ساتھ ساتھ ٹیسٹوسٹیرون ہارمون کی مقدار بھی کم ہوتی جاتی ہے، اس لیے ضروری ہے کہ مرد 40 سال کی عمر سے پہلے اور اس کے دوران خوراک کا خاص خیال رکھیں۔ اب سوال یہ آتا ہے کہ 40 سال کی عمر میں آپ کو خوراک سے متعلق کون سے اہم ٹپس پر عمل کرنا چاہیے؟ اس آرٹیکل میں ہم ان تمام اہم ٹپس پر بات کریں گے، جن کی ضرورت 40 سال کی عمر میں بڑھ جاتی ہے۔ آپ کو بھی ان تجاویز پر عمل کرنا چاہیے تاکہ آپ 40 سال کی عمر کے بعد خود کو فٹ اور صحت مند محسوس کر سکیں۔

5-diet-tips-for-men-after-40s-expert-tips-in-Urdu

1. غذا میں فائبر شامل کریں (Men should add fiber in diet)

آپ اپنی خوراک میں فائبر سے بھرپور غذائیں شامل کریں کیونکہ فائبر شامل کرنے سے بی پی کنٹرول، کولیسٹرول کی سطح کنٹرول میں رہتی ہے اور وزن بھی کنٹرول میں رہتا ہے۔ اگر آپ کو کبھی کھانے کی خواہش ہو تو آپ کو فائبر کا استعمال کرنا چاہیے۔ غذائیت پر توجہ دینے سے آپ کے دل کی صحت، تولیدی صحت، پٹھوں کی صحت کا مسئلہ بڑھ سکتا ہے۔ سست میٹابولزم کی وجہ سے، آپ کے لیے وزن کو سنبھالنا مشکل ہو جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  یہ 5 مصالحے مردوں کے لیے بے مثال ہیں، اگر آپ انہیں روزانہ کھائیں. گے تو آپ کی جسمانی قوت میں اضافہ ہوگا۔

2. غذا میں پروٹین اور سارا اناج شامل کریں (Add whole grain and protein in diet)

آپ کو اپنی خوراک میں پروٹین کے ذرائع جیسے اومیگا 3 فیٹی ایسڈ، گری دار میوے، کم چکنائی والی دودھ کی مصنوعات، ہول اناج جیسے جئی وغیرہ کو شامل کرنا چاہیے۔ 40 کے بعد آپ کے دل کو صحت مند رکھنے کے لیے پروٹین اور سارا اناج ضروری غذائی اجزاء ہیں۔ مردوں کو 40 سال کی عمر کے بعد متوازن غذا لینے کی ضرورت ہے اور خاص طور پر انہیں اپنی طاقت، سٹیمینا اور اینٹی آکسیڈنٹ سے بھرپور خوراک پر توجہ دینی چاہیے تاکہ عمر رسیدہ سائنس سست ہو سکے۔

3. خوراک میں اچھی چکنائی شامل کریں : (Men should add healthy fats in diet)

آپ کو اپنی خوراک میں زیتون، گری دار میوے، ایوکاڈو جیسی چیزوں کا استعمال کرنا چاہیے۔ ان میں صحت مند چکنائی کی اچھی مقدار ہوتی ہے۔ 40 سال کی عمر کے بعد سب سے پہلے کولیسٹرول کی سطح بڑھ جاتی ہے۔ اس کے علاوہ پری ذیابیطس، موٹاپا، ہائی بلڈ پریشر کا مسئلہ بڑھ سکتا ہے۔ اس مسئلے سے بچنے کے لیے آپ کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا کہ کھانے میں کیا کھایا جائے اور کن چیزوں سے پرہیز کیا جائے، ایسی چیزیں نہ کھائیں جن میں ٹرانس فیٹس کی مقدار زیادہ ہو۔

4. مردوں میں پانی کی مقدار میں اضافہ کریں۔ (Increase fluid intake in men)

آپ کو اپنی خوراک میں سیال کی مقدار میں اضافہ کرنا ہوگا۔ آپ کے پٹھوں کی صحت اور گردے کے کام کے لیے ہائیڈریشن ضروری ہے۔ آپ کو روزانہ 2 سے 3 لیٹر پانی پینا چاہیے۔ اس کے علاوہ آپ اپنی خوراک میں جڑی بوٹیوں کی خوراک، سبز چائے، جوس، سبزیوں کا رس، لیمونیڈ شامل کریں۔ آپ اپنی خوراک میں ناریل کا پانی بھی شامل کر سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں-ساتھی بانجھ پن سے دوچار ہے تو اس کا ساتھ کیسے دیں؟ ماہرین سے خصوصی مشورے جانیں۔

5-diet-tips-for-men-after-40s-expert-tips-in-Urdu
All Image Source: Freepik.com

5. 40 کے بعد ان کھانوں سے پرہیز کریں۔(Avoid these foods after 40s)

  • آپ کو کیفین کے استعمال سے پرہیز کرنا چاہیے۔ بہت زیادہ کیفین کا استعمال سینے میں جلن اور تیزابیت کا باعث بن سکتا ہے۔
  • آپ کو تلی ہوئی کھانوں، پیک شدہ کھانوں، تیل والے کھانے سے پرہیز کرنا چاہیے۔
  • آپ کو ان چیزوں سے بھی پرہیز کرنا ہوگا جن میں سوڈیم کی مقدار زیادہ ہو، زیادہ نمک کھانے سے بی پی بڑھ سکتا ہے اور گردوں کے امراض کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔
  • جگر کو صحت مند رکھنے کے لیے آپ کو 40 سال کی عمر کے بعد شراب بالکل نہیں پینی چاہیے، حالانکہ یہ کسی بھی عمر میں نقصان دہ ہوتی ہے، لیکن 40 سال کے بعد بھی اگر آپ شراب نوشی کرتے ہیں تو جگر کی خرابی کا مسئلہ بڑھ سکتا ہے۔

40 سال کی عمر میں، آپ کو پروٹین، صحت مند چکنائی، سارا اناج، ضروری فائبر کی مقدار، اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور غذا شامل کرنی چاہیے۔ آپ کو اچھی خوراک اور صحت مند طرز زندگی پر توجہ دینی چاہیے اور اگر آپ کو بیماری کی کوئی علامات نظر آئیں تو آپ کو ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button