جلد کی حفاظت:skincare in Urdu

30 سال کے بعد آپ کی جلد ڈھیلی پڑ سکتی ہے، جلد کو ٹائٹ کرنے کے لیے یہ 7 گھریلو ٹوٹکے اپنائیں

چہرے کی جلد کو سخت کرنے کا طریقہ: بڑھتی عمر کے ساتھ جلد کی جلد ڈھیلی اور بے جان ہوجاتی ہے۔ ایسے میں اگر آپ چاہیں تو کچھ گھریلو ٹوٹکے آزما سکتے ہیں۔

عمر بڑھنے کے ساتھ جسمانی مسائل کے ساتھ جلد سے متعلق مسائل بھی جنم لیتے ہیں۔ جیسے جیسے عمر بڑھتی ہے. جھلتی ہوئی جلد پھیکی اور بے جان ہو جاتی ہے۔ 30 سال کی عمر کے بعد جلد میں بہت سی تبدیلیاں دیکھنے کو ملتی ہیں. جن میں ڈھیلی اور بے جان جلد شامل ہے۔ جلد کی قسم اور خوبصورت بنانے کے لیے خواتین اسکن کیئر پروڈکٹس کا استعمال کرتی ہیں. لیکن ان میں کیمیکلز ہوتے ہیں۔ اگر آپ چاہیں تو، آپ جلد کی رنگت کے گھریلو علاج (جلد کی دیکھ بھال کی تجاویز) پر بھی عمل کر سکتے ہیں۔ اس سے آپ کے چہرے کی جلد ٹائٹ ہو جائے گی اور ساتھ ہی بڑھتی عمر کے آثار بھی کم ہو جائیں گے۔ جلد کو ٹائٹ کرنے کے گھریلو ٹوٹکے جانیے-

 for skin tightening after Method 30 year in urdu

جلد کو سخت کرنے کا گھریلو علاج.(how to tighten face skin naturally at home in)

1. جلد کے لیے ککڑی۔

کھیرا نہ صرف صحت بلکہ جلد کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔ کھیرے کا استعمال آپ ڈھیلی جلد کو ٹائٹ بنانے کے لیے کر سکتے ہیں۔ کھیرے میں پانی کی مقدار زیادہ ہوتی ہے جس کی وجہ سے جلد ہائیڈریٹ رہتی ہے۔ آپ کھیرے کو پیس لیں۔ اسے چہرے پر لگائیں اور 15 منٹ بعد چہرے کو پانی سے دھو لیں۔ اس سے عمر بڑھنے کی علامات بھی کم ہو جائیں گی۔ آپ جوان اور خوبصورت نظر آئیں گے۔

2. ایلو ویرا جیل جلد کو سخت کرنے کے لیے کیسے لگائیں.(aloe vera for skin tightening)

ایلو ویرا جیل جلد کو ٹائٹ بنانے کا بہترین گھریلو علاج ہے۔ اس میں جلد کے لیے مالیک ایسڈ ہوتا ہے جو جلد کی لچک کو بڑھاتا ہے۔ اس کے ساتھ ایلوویرا چہرے کے مہاسوں اور داغ دھبوں سے بھی نجات دلاتا ہے۔ اس کے لیے قدرتی ایلوویرا کا گودا لیں، اسے پورے چہرے پر لگائیں۔ خشک ہونے کے بعد چہرے کو اچھی طرح دھو لیں۔ یہ گھریلو ٹوٹکا روزانہ کرنے سے آپ کی جلد ٹائٹ ہو جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں: چہرے پر سیاہ دھبوں کی وجوہات کیا ہیں؟ جانیے اس سے نجات کے آسان طریقے

3. سبز چائے جلد سخت. (green tea skin tightening)

سبز چائے صحت، بالوں اور جلد کے لیے فائدہ مند ہے۔ سبز چائے بڑھاپے کی علامات کو کم کرنے کے لیے بھی مفید سمجھی جاتی ہے۔ سبز چائے میں اینٹی آکسیڈنٹس ہوتے ہیں، جو جلد کی خرابی کو ٹھیک کرتے ہیں۔ بڑھاپے کی علامات کو کم کرتا ہے اور ڈھیلی جلد کو سخت کرتا ہے۔ سبز چائے کے استعمال سے جلد کا رنگ بھی بہتر ہوتا ہے۔ اس کے لیے آپ گرین ٹی کا گھریلو فیس پیک استعمال کر سکتے ہیں۔

4. تیل کے چہرے کا مساج. (oil face massage)

بڑھاپے میں جلد کو چست رکھنے کے لیے تیل کی مالش بہت ضروری ہے۔ اس سے جلد ہموار، ملائم اور صاف ہوجاتی ہے۔ چہرے کی مالش کے لیے آپ ناریل کا تیل، زیتون کا تیل استعمال کر سکتے ہیں۔ ان میں وٹامن ای ہوتا ہے جو جلد کو فائدہ پہنچاتا ہے۔ تیل کی مالش سے خون کی گردش بھی بہتر ہوتی ہے۔

5. کیلا جلد کو سخت کرنے کے لیے.(banana for skin tightening)

کیلا ڈھیلی، بے جان جلد کو چست اور جوان بنانے کے لیے فائدہ مند ہے۔ کیلا کولیجن کی پیداوار کو فروغ دیتا ہے، جو جلد کی جکڑن کو بہتر بناتا ہے۔ چہرے کی خوبصورتی کو برقرار رکھنے کے لیے آپ کیلا بھی کھا سکتے ہیں۔ آپ اس کا فیس پیک بھی لگا سکتے ہیں۔ اس کے لیے ایک کیلا میش کر کے چہرے پر لگائیں۔ 15-20 منٹ بعد پانی سے چہرہ دھو لیں۔

6. جلد کو سخت کرنے کے لیے کافی.(coffee for skin tightening)

 کافی جلد کو نرم، چست بنانے میں مدد دیتی ہے۔ کافی جلد کو بھی نکھارتی ہے۔ کافی میں موجود اینٹی آکسیڈنٹس عمر بڑھنے کی علامات کو کم کرتے ہیں۔ اس کے لیے کافی اور شہد کا گھریلو فیس پیک تیار کریں۔ اس سے جلد پر ہلکے ہاتھوں سے مساج کریں۔ تھوڑی دیر بعد صاف پانی سے چہرہ دھو لیں۔

یہ بھی پڑھیں: موسم سرما میں مہاسے: سردیوں میں مہاسوں کی وجہ سے جلد بے جان لگنے لگی؟ 

 for skin tightening after Method 30 year in urdu

7. وافر مقدار میں پانی پیئے۔ (Drink Plenty of Water)

جلد کو ٹائٹ بنانے، اسے ہائیڈریٹ رکھنے کے لیے پانی پینا بھی بہت ضروری ہے۔ پانی پینے سے جسم میں جمع ہونے والے زہریلے مادے آسانی سے باہر نکل جاتے ہیں۔ اس کا اثر جلد پر بھی نظر آتا ہے۔ اس کے لیے آپ کو روزانہ 8 سے 10 گلاس پانی ضرور پینا چاہیے۔

اگر آپ کی جلد بھی ڈھیلی اور بے جان ہوگئی ہے تو آپ مذکورہ گھریلو ٹوٹکے آزما سکتے ہیں۔ لیکن اگر آپ کی جلد حساس ہے تو اسے کسی ماہر کے مشورے پر ہی استعمال کریں۔ جلد کو خوبصورت رکھنے کے لیے صحت بخش خوراک لینا بھی ضروری ہے۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button