صحت مند غذا

اگر جسم میں یہ 5 مسائل ہیں تو بھولے سے بھی دودھ نہ پئیں، صورتحال بگڑ سکتی ہے۔

دودھ پینے سے کس کو پرہیز کرنا چاہیے: دودھ کا استعمال ہر کسی کے لیے فائدہ مند نہیں ہے۔ کچھ صحت کے مسائل میں دودھ پینا نقصان دہ ہو سکتا ہے۔

دودھ ایک ہمہ گیر غذا ہے، جس کا نہ صرف براہ راست استعمال کیا جاتا ہے بلکہ دودھ کو مختلف قسم کی مٹھائیاں اور پکوان بنانے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔ دودھ غذائیت سے بھرپور ہوتا ہے۔ جسم کو غذائیت فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ یہ کئی سنگین بیماریوں کے خطرے کو کم کرنے میں بھی مدد کرتا ہے۔ دودھ پینے سے کئی طرح کے مسائل بھی دور ہو جاتے ہیں۔ دودھ میں موجود میگنیشیم اور کیلشیم ہڈیوں کو مضبوط بناتا ہے۔ اس کے ساتھ یہ ہڈیوں سے متعلق کئی مسائل کو دور کرنے میں بھی فائدہ مند ہے۔ اس کے ساتھ یہ بچوں کی جسمانی نشوونما اور دانتوں کو مضبوط بنانے کے لیے بھی بہت ضروری ہے۔ اسی لیے بہت سے ماہرین صحت ہر عمر کے لوگوں کو روزانہ دودھ پینے کا مشورہ دیتے ہیں۔ پٹھوں کو مضبوط رکھنے کے لیے دودھ کا استعمال بھی بہت ضروری ہے۔

health problems when milk is avoided in Urdu

لیکن کیا دودھ کا استعمال سب کے لیے فائدہ مند ہے؟ کیا ہر کوئی دودھ پی سکتا ہے؟ نہیں، ماہرین صحت کے مطابق ایسا نہیں ہے۔  دودھ پینا کچھ لوگوں کے لیے پریشانی کا باعث بن سکتا ہے۔ صحت کی کچھ ایسی حالتیں ہیں جن میں اگر دودھ پیا جائے تو فائدہ کے بجائے نقصان کا باعث بنتا ہے۔ اس آرٹیکل میں ہم آپ کو 5 ایسے ہی صحت کے مسائل کے بارے میں بتا رہے ہیں. جن میں دودھ پینے سے آپ کی حالت خراب ہو سکتی ہے (صحت کے مسائل جب ہ دودھ سے پرہیز کرنا چاہیے)۔

ان 5 مسائل میں دودھ پینے سے کن کو پرہیز کرنا چاہیے؟(Who Should Avoid Drinking Milk )

1. جسم میں سوزش ہوتی ہے۔(There is inflammation in the body)

ماہر غذائیت گریما کے مطابق اگر کسی شخص کے جسم میں سوزش کا مسئلہ ہے تو دودھ پینا اس کی صحت کو خراب کر سکتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ دودھ میں سیر شدہ چکنائی ہوتی ہے۔ سیر شدہ چربی جسم میں لپڈ پولی سیکرائڈز نامی سوزش کے مالیکیولز کے جذب کو بڑھاتی ہے۔ جس کی وجہ سے یہ سوزش کو بڑھانے میں معاون ہے۔ "متعدد مطالعات نے بڑھتی ہوئی سوزش اور سوزش کے ساتھ منسلک مسائل، جیسے مہاسے، ڈیری مصنوعات کے ساتھ ایک ایسوسی ایشن کو دکھایا ہے.”

یہ بھی پڑھیں: گرمیوں میں سلاد میں پیاز شامل کریں تو یہ 5 فائدے آپ کی صحت کے لیے دستیاب ہوں گے۔

2. اگر جگر کا مسئلہ ہو۔(If there is a liver problem)

اگر کوئی شخص جگر سے متعلق مسائل جیسے کہ فیٹی لیور اور جگر کی سوزش میں مبتلا ہے۔ اس لیے اسے دودھ پینے سے گریز کرنا چاہیے۔ اس صورت حال میں اگر آپ دودھ پیتے ہیں تو آپ کا جگر دودھ کو صحیح طریقے سے ہضم نہیں کر پاتا، جس سے جگر میں سوزش کا مسئلہ بڑھ جاتا ہے، ساتھ ہی آپ کے جسم میں چربی بھی بڑھ جاتی ہے۔ اس کے علاوہ دودھ ٹھیک سے ہضم نہ ہونے کی وجہ سے پیٹ کے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔

3. PCOS والے لوگ.(People with PCOS)

دودھ پینا PCOS یا ہارمونل عدم توازن سے متعلق دیگر مسائل میں بہت نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ کیونکہ دودھ پینے سے جسم میں اینڈروجن اور انسولین کی سطح بڑھ جاتی ہے۔ جو خواتین PCOS کا شکار ہیں، اگر وہ ڈیری مصنوعات کا استعمال کرتی ہیں تو اس سے ان کے جسم میں انسولین اور ہارمون کی سطح متاثر ہوتی ہے۔ اگر آپ ہارمونل عدم توازن کے مسائل کا شکار ہیں تو دودھ پینے سے گریز کریں یا اسے محدود مقدار میں استعمال کریں۔

4 . اگر آپ کو دودھ سے الرجی ہے۔(If you are allergic to milk)

کچھ لوگوں کو دودھ سے الرجی ہوتی ہے۔ وہ لوگ جب بھی دودھ پیتے ہیں تو ان کے جسم میں الرجی کا ردعمل ہوتا ہے۔ دودھ کی الرجی کے اس مسئلے کو لییکٹوز عدم برداشت کہا جاتا ہے۔ ان لوگوں کو دودھ میں موجود شکر (لییکٹوز) کو ہضم کرنے میں پریشانی ہوتی ہے۔ اگر یہ لوگ دودھ پیتے ہیں تو اس سے اسہال، گیس، اپھارہ اور اپھارہ جیسے مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ ان لوگوں کو بھول کر بھی دودھ نہیں پینا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں: اگر جسم میں یہ 4 مسائل ہیں تو گھی کھانے سے حالات خراب ہو سکتے ہیں، جانئے کن لوگوں کو گھی نہیں کھانا چاہیے

health problems when milk is avoided in Urdu

5. پیٹ خراب ہونے کی صورت میں.(In case of upset stomach)

اگر کوئی شخص پیٹ سے متعلق مسائل جیسے پیٹ میں گیس، قبض، اپھارہ وغیرہ میں مبتلا ہے۔ لہذا دودھ پینا علامات کو مزید شدید بنا سکتا ہے۔ اس لیے کوشش کریں کہ پیٹ خراب ہونے پر دودھ نہ پییں۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
AllEscort