دل کی صحت :heart health in Urdu

اگر آپ دل کے امراض سے بچنا چاہتے ہیں تو ابھی سے وزن کم کرنا شروع کر دیں، ڈاکٹر سے جان لیں وزن کم کرنے کے 5 طریقے

خواتین کا صحت مند وزن کا دن 20 جنوری کو منایا جاتا ہے، اس ایپی سوڈ میں ہم دل کی بیماریوں سے بچنے کے لیے وزن کم کرنے کے طریقوں کے بارے میں بات کریں گے۔

خواتین کا صحت مند وزن کا دن 20 جنوری کو منایا جاتا ہے. اور آج کی اس ایپی سوڈ میں ہم بات کریں گے کہ موٹاپا کس طرح دل کی بیماریوں کو دعوت دیتا ہے. یعنی اگر آپ کا وزن بڑھ گیا ہے تو یہ آپ کے دل کو کیسے نقصان پہنچا سکتا ہے۔ جن خواتین کا وزن زیادہ ہے. انہیں دل سے متعلق مسائل ہو سکتے ہیں. جیسے ہارٹ فیل ہونا، ہارٹ اٹیک، دل کی بے قاعدگی وغیرہ۔ خواتین میں امراضِ قلب کے بڑھتے ہوئے خطرے کی وجہ سے حمل کے دوران قبل از وقت ڈیلیوری کا خطرہ بڑھ جاتا ہے. اس لیے آپ کو وزن پر قابو رکھنا چاہیے۔ اپنے وزن کو عمر اور قد کے مطابق رکھ کر آپ دل کے امراض سے بچ سکتے ہیں. اور صحت مند زندگی گزار سکتے ہیں۔ اس مضمون میں، ہم وزن میں اضافے. کی وجہ سے دل کی بیماری کے خطرے اور وزن کم کرنے کے طریقوں پر بات کریں گے۔ 

healthy weight women heart prevention in urdu

 

وزن بڑھنے سے دل کے مسائل کیا ہوتے ہیں.(Weight gain leads to heart diseases)

ماہرین کا خیال ہے کہ بڑھتے ہوئے وزن کے ساتھ دل کے امراض کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ جیسے جیسے موٹاپا بڑھتا ہے دل کا سائز بھی بڑھتا ہے جس سے ہارٹ اٹیک یا فالج کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ دل کا سائز بڑھنے سے دھڑکنوں پر برا اثر پڑتا ہے اور آپ کو کسی بھی وقت حملہ ہو سکتا ہے۔ وزن بڑھنے سے دل کے اوپری حصے کا سائز بڑھ جاتا ہے جس سے دل کو پمپ کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔ دل کے خطرے کو کم کرنے کے لیے، آپ کو پہلے وزن کم کرنا چاہیے۔ دل کی بیماری سے ہائی بی پی، ہارٹ فیلیئر، ہارٹ اٹیک، فالج، میٹابولک سنڈروم کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ موٹاپے کی وجہ سے خراب کولیسٹرول کی مقدار بڑھ جاتی ہے جس سے دل کی بیماری کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: فالج کے مسئلے کی 3 اقسام ہوسکتی ہیں ، ان کی علامات جانیں۔

بار بار وزن میں کمی یا اضافہ دل کی بیماریوں کو بھی دعوت دیتا ہے۔(Repeated weight loss or increase also invites heart disease)

اگر آپ کا وزن بار بار کم یا زیادہ ہوتا ہے تو دل کی بیماری کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔ وزن میں اتار چڑھاؤ بلڈ پریشر، کولیسٹرول، بلڈ شوگر میں اضافے کے مسائل پیدا کر سکتا ہے. جو کہ ہارٹ اٹیک کا باعث بن سکتا ہے۔ موٹی خواتین میں دل کا دورہ پڑنے کا خطرہ عام جسم کے مقابلے میں 127 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ اگر آپ کا وزن زیادہ ہے تو دل کے اوپری حصے کو جسے ہم ایٹریا کہتے ہیں.کو پمپ کرنے میں دشواری ہوتی ہے. جس سے دل کی دھڑکن کم ہوجاتی ہے۔ دل کی بے ترتیب دھڑکن ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھا دیتی ہے۔

 

ڈاکٹر سنتوش کمار ڈورا، سینئر کارڈیالوجسٹ، ایشین ہارٹ انسٹی ٹیوٹ، ممبئی نے کہا کہ زیادہ وزن والی. خواتین میں دل کی شریانوں کی بیماری کا خطرہ 64 فیصد ہوتا ہے۔ دل کے امراض سے بچنے کے لیے خواتین کو چاہیے کہ وہ اپنی خوراک میں کاربوہائیڈریٹس، کم گلیسیمک غذائیں جیسے براؤن رائس، ہول گرین پلس وغیرہ شامل کریں۔ اس کے علاوہ ہفتے میں کم از کم 5 دن 30 منٹ ورزش کریں۔

یہ بھی پڑھیں: کس عمر میں بلڈ پریشر نارمل ہونا چاہیے؟ ڈاکٹر سے بی پی سے متعلق حقائق جانیں۔

healthy weight women heart prevention in urdu

 

وزن کم کرنے کے آسان طریقے.(Easy ways to reduce weight)

وزن کم کرنے کے لیے آپ کو ان 5 آسان تدابیر پر عمل کرنا چاہیے.ایک ماہ تک ان طریقوں پر عمل کرنے کے بعد ہی آپ فرق محسوس کریں گے۔

1. پراسیسڈ فوڈز، مسالیدار کھانا، تیل اور پیک شدہ کھانا بند کریں، اپنی خوراک میں تازہ سبزیاں.اناج، پھلیاں، پھلیاں، دال شامل کریں۔

2. آپ کو زیادہ سے زیادہ پانی پینے کی کوشش کرنی ہوگی، چائے کے بجائے کالی چائے یا سبز چائے لیں، پیک شدہ جوس بھی نہ کھائیں۔

3. روزانہ 40 منٹ ورزش کریں، ورزش میں آپ یوگا، مراقبہ، کارڈیو، جاگنگ وغیرہ کو شامل کر سکتے ہیں، آپ مزے کی ورزش میں ڈانس کر سکتے ہیں۔

4. شوگر ڈیٹوکس چیلنج لیں، آپ کو اپنے معمولات سے چینی کو مکمل طور پر ختم کر دینا چاہیے، آپ کو چینی کے متبادل کو بھی محدود مقدار میں لینا چاہیے، اس کے زیادہ استعمال سے گریز کریں۔

5. لفٹ کے بجائے سیڑھیوں کا استعمال کریں، اپنے کھانے کا حصہ کم کریں، رات 8 بجے کے بعد کھانا نہ کھائیں۔ وقت پر سوئیں اور تناؤ سے دور رہیں۔

وزن کم کرنے کے لیے صحت بخش خوراک اور ورزش کا کردار اہم ہے، ان دونوں باتوں کو ذہن میں رکھ کر آپ صحت مند وزن برقرار رکھ سکتے ہیں اور زیادہ وزن سے بچ سکتے ہیں۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button