بالوں کی حفاظت :Hair Protection in Urdu

چقندر کا شیمپو بالوں میں استعمال کریں، آپ بہت سے مسائل سے چھٹکارا پا سکتے ہیں۔

گھریلو شیمپو: بالوں کی خوبصورتی بڑھانے کے لیے چقندر کے شیمپو کا استعمال کریں۔ آئیے جانتے ہیں اس کا آسان نسخہ-

گھریلو شیمپو: جسم میں آئرن کی کمی کو پورا کرنے کے لیے. آپ نے کئی بار چقندر کا استعمال کیا ہوگا. لیکن کیا آپ نے کبھی اپنے بالوں میں چقندر کا استعمال کیا ہے؟ جی ہاں چقندر نہ صرف آپ کی صحت کے لیے فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے بلکہ یہ آپ کے بالوں کے لیے بھی بہت فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ چقندر میں فائبر، منرلز، وٹامنز اور کلورین کی مقدار زیادہ ہوتی ہے۔ دیگر نشاستہ دار سبزیوں کے مقابلے اس میں کاربوہائیڈریٹ کی سطح بہت کم ہوتی ہے۔ اپنے بالوں پر چقندر کا باقاعدگی سے استعمال آپ کے بالوں کو بہت زیادہ غذائیت فراہم کرتا ہے، جس سے آپ کے بال بہت پرکشش نظر آتے ہیں۔ بالوں کے لیے چقندر کا شیمپو

چقندر کا استعمال آپ اپنے بالوں میں کئی طریقوں سے کر سکتے ہیں۔ اس میں چقندر کا شیمپو بھی ہوتا ہے۔ آپ بازار میں چقندر سے تیار کردہ شیمپو آسانی سے حاصل کر سکتے ہیں۔ لیکن ان شیمپو میں کئی طرح کے کیمیکلز کا خطرہ ہوتا ہے، جو آپ کے بالوں کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ ایسی صورت حال میں گھر میں تیار کردہ بیٹ شیمپو کو اپنے بالوں میں استعمال کریں۔ آج اس آرٹیکل میں ہم آپ کو گھر پر چقندر کا شیمپو بنانے کا طریقہ بتائیں گے۔

بالوں کے لیے چقندر کا شیمپو بنانے کا طریقہ.(How to make beetroot shampoo for hair)

آپ گھر پر چقندر کا شیمپو بہت آسان طریقے سے تیار کر سکتے ہیں۔ آئیے جانتے ہیں اس کا آسان نسخہ

beautician-doing-massage-face-with-cosmetics
All Image Source: Freepik.com

ضروری اجزاء.(necessary ingredients)

  • پانی – آدھا کپ پانی
  • Castile صابن – آدھا کپ
  • چقندر کا رس – کپ

عمل.(process)

سب سے پہلے آدھا کپ پانی لیں۔ اس میں کاسٹائل صابن ڈالیں، اب اسے آہستہ آہستہ مکس کریں۔ جب یہ ہموار پیسٹ کی طرح بن جائے تو اس میں چقندر کا رس ملا دیں۔ اس کے بعد اسے دوبارہ مکس کریں۔ ہر چیز کو اچھی طرح مکس کرنے کے بعد، اسے تقریباً 30 منٹ کے لیے چھوڑ دیں۔ 

یہ بھی پڑھیں –بھنا ہوا چنا بالوں کے لیے فائدہ مند ہے، یہ طریقہ استعمال کریں۔

چقندر لے لیں شیمپو تیار ہے۔ اب اسے بوتل میں بھر کر رکھ لیں۔ ضرورت پڑنے پر آپ اس شیمپو کو استعمال کر سکتے ہیں۔

بالوں کے لیے چقندر کے فوائد-(Benefits of Beetroot for Hair)

بھوری بالوں کے لیے چقندر.(Beetroot for gray hair)

چقندر میں وٹامن سی، ای اور کیروٹین سے بھرپور اینٹی آکسیڈنٹ خصوصیات ہیں۔ یہ تمام اینٹی آکسیڈنٹس عمر بڑھنے کی علامات کو کم کرنے میں کارگر ثابت ہو سکتے ہیں۔ اگر آپ سفید بالوں کے مسئلے سے دوچار ہیں تو چقندر کا شیمپو استعمال کریں۔ اس سے سفید بالوں کا مسئلہ دور ہو جائے گا۔ اس کے علاوہ آپ چقندر کے شیمپو کو بالوں میں دیگر کئی طریقوں سے بھی استعمال کر سکتے ہیں۔

بال گرنے کے لیے چقندر.(Beetroot for hair fall)

بالوں میں غذائی اجزاء کی کمی، دھول اور آلودگی کی وجہ سے آپ کے بال بہت زیادہ گر سکتے ہیں۔ ایسی صورت حال میں چقندر آپ کے بالوں کے لیے بہت فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ اس میں موجود پوٹاشیم، میگنیشیم، آئرن، فاسفورس اور الیکٹرولائٹس بالوں کے لیے بہت صحت بخش ثابت ہوتے ہیں۔ یہ آپ کے بے جان بالوں کو غذائیت فراہم کرتے ہیں جس سے بالوں کے ٹوٹنے اور گرنے کے مسئلے کو دور کیا جا سکتا ہے۔

خشکی کے لیے چقندر.(Beetroot for dandruff)

چقندر کے استعمال سے خشکی کا مسئلہ دور کیا جا سکتا ہے۔ یہ آپ کے بالوں میں خارش کو کم کر سکتا ہے۔ چقندر میں موجود انزائمز خشکی کے علاج میں کارآمد ثابت ہوتے ہیں۔ چقندر میں سلیکا بھی ہوتا ہے جو کہ کھوپڑی کو نمی بخشنے میں موثر ہے۔ یہ آپ کی کھوپڑی کو ہائیڈریٹ کر سکتا ہے اور چھیدوں کو غذائیت فراہم کر سکتا ہے۔ اس سے خشکی کا مسئلہ کم ہوجاتا ہے۔

صحت مند کھوپڑی کے لیے چقندر.(Beetroot for a healthy scalp)

چقندر کا استعمال جسم میں خون کی گردش کو بڑھاتا ہے۔ یہ صحت مند کھوپڑی کے لیے ضروری ہے۔ اپنے بالوں پر چقندر کے شیمپو کا باقاعدہ استعمال آپ کی کھوپڑی کو بھی صحت مند رکھ سکتا ہے۔

vیہ بھی پڑھیں –ہیئر فال کنٹرول آئل: یہ 4 تیل بالوں کو گرنے سے روکتے ہیں، استعمال کرنے کا طریقہ جانیں۔

beautician-doing-massage-face-with-cosmetics
All Image Source: Freepik.com

آپ گھر پر چقندر کا شیمپو آسان طریقے سے تیار کر سکتے ہیں۔ یہ آپ کے بالوں کے لیے بہت فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ تاہم یہ بات ذہن میں رکھیں کہ اگر بالوں سے متعلق مسئلہ بہت زیادہ بڑھ رہا ہے تو ایسی صورت میں کسی ماہر سے ضرور رجوع کریں۔

 

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button