دیگر بیماریاں

کیا آپ بلا ضرورت ٹانگیں ہلاتے رہتے ہیں؟ اس عادت کے پیچھے یہ 6 وجوہات ہوسکتی ہیں۔

آپ نے ایسے بہت سے لوگوں کو دیکھا ہوگا. جو بیٹھے بیٹھے ٹانگیں ہلاتے رہتے ہیں۔ اگر آپ نے بھی کبھی سب کے سامنے بیٹھتے ہوئے اپنے پاؤں ہلائے ہیں .تو اس پر آپ کو بڑوں نے سرزنش کی ہوگی۔ درحقیقت بیٹھتے وقت غیر ضروری طور پر ٹانگیں ہلانے کی عادت کو غلط عادت سمجھا جاتا ہے۔ سائنس کی زبان میں اسے ایک قسم کی بیماری سمجھا جاتا ہے۔ غیر ضروری طور پر ٹانگیں ہلانے کی عادت کو میڈیکل سائنس میں ریسٹلیس لیگز سنڈروم (RLS) کہا جاتا ہے۔ تحقیق کے مطابق ایسے افراد میں ہارٹ اٹیک کا خطرہ دوگنا ہو جاتا ہے. جو ٹانگیں ہلانے کے مسئلے کا شکار ہوتے ہیں۔ محققین کا یہ بھی کہنا ہے. کہ RLS کا براہ راست تعلق نیند کی کمی کے مسئلے سے ہے۔ درحقیقت، RLS والا شخص سونے سے پہلے 200 سے 300 بار اپنی ٹانگ کو حرکت دیتا ہے۔ اس سے بلڈ پریشر اور دل کی دھڑکن بڑھ جاتی ہے۔ بعد میں یہ دل کی بیماریوں یعنی قلبی امراض کی سب سے بڑی وجہ بن جاتی ہے۔ غیر ضروری طور پر ٹانگیں ہلانے کا مسئلہ کئی وجوہات کی وجہ سے ہو سکتا ہے.آئیے اس مسئلے کے بارے میں تفصیل سے جانتے ہیں۔

ٹانگیں ہلانے کی عادت کی وجوہات. (Leg Shaking Habit Causes)

leg shaking habit causes effects in urdu
source images freepik

لوگوں کو غیر ضروری طور پر پاؤں ہلانے کی عادت نہیں ہے۔ زیادہ تر لوگ اپنی ٹانگیں اس وقت ہلاتے ہیں جب وہ بے چینی یا تناؤ کا شکار ہوتے ہیں۔ کچھ لوگ کچھ سوچتے ہوئے اپنے پاؤں ہلاتے ہیں اور کچھ لوگ سگریٹ نوشی، شراب نوشی کرتے ہوئے اپنے پاؤں ہلاتے ہیں۔ یہ مسئلہ کئی وجوہات کی وجہ سے ہو سکتا ہے۔

1. جینیاتی وجوہات کی وجہ سے. 

غیر ضروری طور پر ٹانگوں کو حرکت دینے کا مسئلہ، جو کہ جینیاتی وجوہات کی وجہ سے ہوتا ہے، اسے لازمی تھرمر کہا جاتا ہے۔ یہ مسئلہ والدین کے جینز کی وجہ سے بھی بچوں میں ہو سکتا ہے۔ اس مسئلہ میں متاثرہ اعضاء کو حرکت دینے سے ہلکا سا آرام ملتا ہے۔ لازمی زلزلہ عام طور پر ہاتھوں اور بازوؤں کے ساتھ ساتھ پاؤں کو بھی متاثر کرتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  تھکاوٹ الرجی کی وجہ سے بھی ہوسکتی ہے، جانئے اس تھکاوٹ کو دور کرنے کے 5 گھریلو ٹوٹکے.

2. بوریت کی وجہ سے.

انسان جب تھکاوٹ اور ذہنی طور پر پریشان ہوتا ہے تو اپنے پاؤں کو حرکت دیتا ہے۔ اس پوزیشن میں پیروں کو حرکت دینے سے انسانی ذہن تھوڑا سا پرسکون ہوتا ہے۔ ایسے لوگ جو کسی جگہ بیٹھ کر بور ہوتے ہیں انہیں یہ مسئلہ ضرور ہوتا ہے۔

3. بے چین ٹانگوں کا سنڈروم (RLS).

یہ حالت اس وقت ہوتی ہے جب انسان کو اپنے پاؤں میں کچھ محسوس نہیں ہوتا یعنی اس کے پاؤں بے حس ہو جاتے ہیں۔ خاص طور پر یہ مسئلہ شام یا رات کے وقت ہوتا ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ وہ وقت ہوتا ہے جب انسان زیادہ دیر تک بیٹھتا ہے۔ لہٰذا ایسی حالت میں شخص اپنے پیروں میں خالی پن محسوس کرتا ہے اور چلنے میں بھی دشواری محسوس کر سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:

leg shaking habit causes effects in urdu

4. پریشانی کی وجہ سے.

بے چینی ٹانگوں کی غیر ضروری حرکت کا باعث بھی بن سکتی ہے۔ اس قسم کی پریشانی میں پاؤں کا ہلنا کچھ دیر کے لیے ہی ہوتا ہے، اس کے بعد جب پریشانی ختم ہوجاتی ہے تو یہ مسئلہ بھی خود بخود ختم ہوجاتا ہے۔

5. کیفین وغیرہ کے استعمال کی وجہ سے۔

کیفین کو ایک قسم کا محرک سمجھا جاتا ہے۔ کیفین کا استعمال آپ کو زیادہ توانائی اور چوکنا محسوس کر سکتا ہے، لیکن اس کا زیادہ استعمال خطرناک سمجھا جاتا ہے۔ ایک شخص کو روزانہ 400 ملی گرام سے زیادہ کیفین نہیں کھانی چاہیے۔ 400 ملی گرام کیفین تقریباً 4 کپ کافی کے برابر ہے۔

6. شراب کا زیادہ استعمال.

شراب کا زیادہ استعمال انسان کے اندر زیادہ ہیجان پیدا کرتا ہے جس کی وجہ سے دماغ میں ڈوپامائن بڑھ جاتی ہے۔ جب اس طرح کی تبدیلیاں انسان کے اندر لمبے عرصے تک ہوتی رہتی ہیں تو اس کی وجہ سے اسے غیر ضروری طور پر ٹانگیں ہلانے کا مسئلہ ہو سکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: یہ 10 پتے دواؤں کی خصوصیات سے بھرپور ہیں ، انہیں خالی پیٹ چبانے سے بہت سے فوائد حاصل ہوتے ہیں۔

لوگوں کو اس طرح پاؤں ہلانے کی عادت نہیں ہے۔ زیادہ تر لوگ اپنی ٹانگیں اس وقت ہلاتے ہیں جب وہ بے چینی یا تناؤ کا شکار ہوتے ہیں۔ کچھ لوگ کچھ سوچتے ہوئے اپنے پاؤں ہلاتے ہیں اور کچھ لوگ سگریٹ نوشی، شراب نوشی کرتے ہوئے اپنے پاؤں ہلاتے ہیں۔ ٹانگیں ہلانا بھی منفی سمجھا جاتا ہے۔ اگر یہ مسلسل ہوتا ہے، تو آپ کو ڈاکٹر یا معالج سے رابطہ کرنا چاہیے۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button