ورزش اور فٹنس

کھانے کے بعد ورزش کیوں نہیں کرنی چاہیے؟ ماہرین سے جانیے اس کے نقصانات

کھانا کھانے کے فوراً بعد ورزش کرنا صحت کو بہت سے نقصان پہنچا سکتا ہے۔ آئیے اس بارے میں جانتے ہیں-

کھانے کے بعد ورزش: آج کل ہر کوئی اپنی فٹنس کو لے کر بہت زیادہ ہوش میں ہے۔ اسی لیے لوگ خود کو فٹ رکھنے کے لیے بہت زیادہ ورزش کرتے ہیں۔ ورزش کرنے کے لیے جسم کو توانائی کی ضرورت ہوتی ہے جس کے لیے ورزش سے پہلے کچھ کھانا ضروری ہے۔  کہ ورزش سے پہلے فوری طور پر کھانا کھانے سے پرہیز کریں۔ اگر آپ کھانے کے فوراً بعد ورزش کرتے ہیں تو آپ کو پٹھوں میں درد اور پیٹ میں درد ہو سکتا ہے۔ تاہم ورزش کے لیے جسم میں توانائی کا ہونا بھی بہت ضروری ہے۔ اس لیے ورزش کرنے سے آدھا گھنٹہ پہلے کچھ. ایسی چیزیں ضرور استعمال کرنی چاہئیں. جو جسم کو توانائی تو دیتی ہیں لیکن پیٹ میں بھاری پن کا باعث نہیں بنتی۔

کھانا ہضم کرنے کے لیے وقت دیں۔(give time to digest food)

آپ نے بہت سے لوگوں کو یہ کہتے ہوئے. سنا ہوگا کہ کھانا کھانے کے فوراً بعد ورزش نہیں کرنی چاہیے۔ ایسا نہیں کرنا چاہیے کیونکہ کھانا آنتوں تک پہنچنے اور ہضم ہونے میں 3-4 گھنٹے لگتے ہیں۔ ایسی حالت میں اگر کھانا کھانے کے فوراً بعد ورزش کی جائے تو اس سے پیٹ میں درد، قے، متلی یا پٹھوں میں درد ہو سکتا ہے۔ ایسے کسی بھی مسئلے سے بچنے کے لیے کھانا کھانے کے کم از کم 3 گھنٹے بعد ورزش کرنی چاہیے۔ تاہم، بھوکے پیٹ پر ورزش کرنا اچھی بات نہیں، ایسی صورت میں آپ ہلکی کوئی چیز پی سکتے ہیں جیسے جئی، کم چکنائی والا کھانا یا پروٹین شیک۔

side effects of exercising after eating in Urud

کس ورزش کے لیے، کتنی دیر پہلے کھانا بہتر ہے۔(For which workout, how long before it is better to eat)

کھانا کھانے کے بعد آپ کو کتنی دیر تک ورزش کرنی چاہیے، یہ دیکھنا بھی ضروری ہے کہ آپ کس قسم کی ورزش یا ورزش کرنے جا رہے ہیں۔ مثال کے طور پر اگر آپ تیراکی یا کوئی بھاری ورزش کرنا چاہتے ہیں تو اس کے لیے کھانا مکمل ہضم ہونے کے بعد یعنی 4 گھنٹے بعد ہی ورزش کریں۔ کیونکہ اس قسم کی ورزش میں زیادہ توانائی درکار ہوتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اگر آپ بھاگنے جارہے ہیں تو کاربوہائیڈریٹ والی چیزیں 3 گھنٹے پہلے کھائیں اس سے جسم کو توانائی ملتی ہے اور ورزش سے جسم کو سستی یا تھکاوٹ محسوس نہیں ہوتی۔

یہ بھی پڑھیں:  اگر آپ تیزی سے وزن کم کرنا چاہتے ہیں تو اپنا میٹابولزم بڑھائیں، آسان طریقے جانیں۔

یہ نقصانات کھانے کے فوراً بعد ورزش کرنے سے ہوتے ہیں۔(These disadvantages are caused by exercising immediately after eating)

کھانے کے فوراً بعد ورزش سے پرہیز کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ ایسا کرنا صحت کے لیے خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔ لوگ اکثر کھانا کھانے کے فوراً بعد متلی محسوس کرتے ہیں، پٹھوں میں درد، خراب ہاضمہ، اور پیٹ میں درد ہوتا ہے۔ تاہم، یہ علامات مختلف لوگوں میں بھی مختلف ہو سکتی ہیں۔ اس لیے اگر آپ بھی پیٹ کے ان تمام مسائل سے بچنا چاہتے ہیں تو پہلے کھانا ہضم ہونے دیں اور پھر ورزش کریں۔

ورزش سے پہلے ان چیزوں کو کھانے سے گریز کریں۔(Avoid eating these things before workout)

ماہرین صحت کے مطابق ورزش کو اچھی طرح کرنے کے لیے کچھ چیزیں ایسی ہیں جن سے پرہیز کرنا چاہیے۔ ان میں چائے، کافی، تلی ہوئی خوراک، گوشت اور دال اور چاول شامل ہیں۔ چائے اور کافی کی بات کریں تو ان کے استعمال سے جسم میں انسولین کی مقدار بڑھ جاتی ہے جو پیٹ میں جلن کا باعث بنتی ہے۔ اس کے ساتھ پانی کی کمی کی شکایت بھی ہو سکتی ہے۔ صرف میری صحت

یہ بھی پڑھیں:  وزن بڑھانے کے لیے دن میں یہ 10 غذائیں کھائیں، وزن تیزی سے بڑھے گا۔

ورزش سے پہلے ان چیزوں کا استعمال فائدہ مند ہوگا۔(Consuming these things before workout will be beneficial)

ورزش کرنے سے پہلے جسم میں توانائی ہونی چاہیے۔ اس کے لیے خشک میوہ جات، کیلا، جئی، ابلا ہوا انڈا، سکمڈ دودھ، مونگ پھلی کا مکھن اور ٹوسٹ کھایا جا سکتا ہے، یہ آسانی سے ہضم ہو جاتے ہیں۔ اس کے ساتھ ان کے استعمال سے جسم میں توانائی بھی برقرار رہتی ہے اور ورزش کے بعد بھی جسم میں سستی اور تھکاوٹ نہیں ہوتی۔

کھانے کے فوراً بعد ورزش نہ کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ تاہم اگر آپ کچھ کھانا چاہتے ہیں تو تقریباً 30 منٹ پہلے ہلکی چیزیں کھائیں۔ تاکہ آپ کو شدید پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button