صحت مند غذا

سردیوں میں پھیپھڑوں کو صحت مند رکھنے کے لیے ڈاکٹر کی طرف سے بتائے گئے ان خاص مشوروں پر عمل کریں۔

سردیوں میں نظام تنفس کا خیال کیسے رکھیں: اگر آپ بھی سردیوں میں سانس کی بیماریوں سے خوفزدہ ہیں تو احتیاطی تدابیر کے بارے میں ڈاکٹر سے رجوع کریں۔

کپکپا دینے والی سردی آگئی ہے. اور شام کے وقت جب زیادہ تر لوگ سیر کے لیے نکلتے ہیں تو سخت سردی ہوتی ہے۔ ساتھ ہی کرسمس اور نیا سال بھی قریب ہے اور ان مواقع پر بہت سے لوگ پارٹی وغیرہ کرنا پسند کرتے ہیں۔ بھیڑ بھاڑ والے علاقوں میں جانے سے بھی سانس کی بیماریوں کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ کیونکہ وہاں وینٹیلیشن کی کمی ہے۔ یہ خطرہ تمباکو نوشی، دھول، نقصان دہ کیمیکلز یا ماحولیاتی آلودگی کی وجہ سے بھی بڑھ جاتا ہے۔ ان تمام انفیکشن سے بچنے کے لیے، کسی کو خراب ہوا کے معیار یا آلودگی والے علاقوں میں جانے سے گریز کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ ایک اچھا طرز زندگی اپنانا چاہیے۔ اس کے علاوہ خود کو محفوظ رکھنے کے لیے آپ کو درج ذیل تجاویز پر عمل کرنا چاہیے۔

tips to take care of your lungs health in urdu

سردیوں کی کچھ عام بیماریاں:(Some common winter diseases)

اگرچہ گورننس سے جڑی بیماری کسی بھی موسم میں ہو سکتی ہے. لیکن سردیوں میں درج ذیل بیماریاں زیادہ پھیلتی ہیں۔

انفلوئنزا: یہ سب سے زیادہ متعدی بیماری ہے جو سردیوں میں پھیلتی ہے. عام سردی کی طرح۔ لیکن اس کی علامات زیادہ شدید ہو سکتی ہیں۔ اس کی علامات میں جسم میں درد، سینے میں درد اور تھکاوٹ شامل ہیں۔

 نمونیا بھی سردیوں میں زیادہ دیکھا جاتا ہے۔ اس بیماری میں پھیپھڑوں میں ہوا کی چھوٹی تھیلیاں سیال سے بھر جاتی ہیں۔

عام نزلہ: زکام ہر موسم میں ایک بار ہونا عام بات ہے۔ اس میں سردی لگنا، نزلہ، بخار وغیرہ جیسی علامات دیکھی جا سکتی ہیں۔

برونکائٹس: اس حالت میں سانس کی نالی یا پھیپھڑے سوج جاتے ہیں۔ اس بیماری سے پہلے عام زکام یا فلو بھی دیکھا جا سکتا ہے۔ اس کی اہم علامت نہ رکنے والی کھانسی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: اچھی صحت کے لیے ایک دن میں کتنے پھل اور سبزیاں کھانے چاہئیں؟ ماہرین سے سیکھیں

اس طرح موسم سرما میں آپ کے پھیپھڑوں کی حفاظت کر سکتے ہیں: (protect your lungs during winter)

سردیوں کے موسم میں ہمارے جسم کو بہت محنت کرنی پڑتی ہے. کیونکہ ایک بڑا کام جسم کے درجہ حرارت کو نارمل رکھنا ہے۔ اس لیے جسم کو گرم کپڑوں کی کئی تہوں سے ڈھانپیں۔ تاکہ جسم کو زیادہ پریشانی نہ ہو اور آپ کے جسم کو آسانی سے گرم کیا جا سکے۔

بخار، زکام اور انفلوئنزا جیسی بیماریوں سے بچنے کے لیے آپ کو ہر سال فلو کا شاٹ بھی لینا چاہیے۔

اس موسم میں وٹامن سی والی غذائیں جیسے گوزبیری، لیموں، نارنگی اور امرود وغیرہ کھائیں۔ ان کے استعمال سے سانس کی بیماریوں کے خطرے سے بچا جا سکتا ہے۔

سائنوسائٹس جیسی بیماریوں سے بچنے کے لیے دن میں نیم گرم پانی پئیں اور خود کو ہائیڈریٹ رکھیں۔ اپنے اردگرد صفائی کا خاص خیال رکھیں اور اسے دن میں لیتے رہیں۔ تاکہ دھول کے ذرات آپ کے نظام تنفس میں داخل نہ ہو سکیں اور آپ بیمار ہونے سے بچ سکیں۔

سردیوں میں قوت مدافعت کو مضبوط رکھنا بھی بہت ضروری ہے۔ قوت مدافعت کو مضبوط بنانے کے لیے ملٹی وٹامنز کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔

جن لوگوں کو پہلے سے ہی سانس کی بیماریاں ہیں وہ اپنے پھیپھڑوں کی صحت کو بہتر بنانے. کے لیے روزانہ سانس لینے کی مشقیں کریں۔

جسم کا درجہ حرارت نارمل رکھنے کے لیے آپ کو دن میں گرم چیزیں. جیسے سوپ، چائے اور کافی وغیرہ کا استعمال کرنا چاہیے۔

ایئر ویز کو خشک ہونے سے بچانے کے لیے گھر میں ہیومیڈیفائر کا استعمال کریں:

اگر باہر کی ہوا کا معیار بہت خراب ہے تو صبح چہل قدمی سے گریز کریں. کیونکہ اس وقت ماحول میں آلودگی اور زہریلے مادوں کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔

اگر آپ کو سانس لینے یا روزمرہ کی سرگرمیاں کرنے میں دشواری ہو رہی ہے. تو فوری طور پر اپنے ڈاکٹر سے رابطہ کرنا یقینی بنائیں۔

یہ بھی پڑھیں: کیا آپ ہفتے میں ایک بار بھی دالیں نہیں کھاتے؟ جانیے دالیں نہ کھانے کے ممکنہ نقصانات

ان تمام احتیاطی تدابیر کو اپنا کر سردیوں میں بیمار ہونے کا خطرہ بہت حد تک کم کیا جا سکتا ہے۔ اس لیے جسم کو گرم رکھیں اور اچھی خوراک کھاتے رہیں۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ہر روز کچھ دیر دھوپ میں بیٹھیں تاکہ آپ کو زیادہ سردی نہ لگے۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button