بچوں کی صحت

بچوں کے تمام دانت کب آتے ہیں؟ جانیے دانت نکالنے کے دوران درد سے نجات کے لیے احتیاطی تدابیر

جب بچے کے دانت نکلتے ہیں تو اسے بہت تکلیف محسوس ہوتی ہے۔ جسے بہت سے والدین بھی نہیں سمجھتے۔

چھ ماہ کی عمر میں بچے کے پہلے دانت یا کچے دانت نکلنا شروع ہو جاتے ہیں۔ چند سالوں کے بعد ان کے دانت اور داڑھ مضبوط ہونا شروع ہو جاتے ہیں۔ جس سے بچوں کو کھانا چبانے میں مدد ملتی ہے۔  کہ جب بچوں میں پچھلے دانت یا داڑھ نکلنا شروع ہو جاتے ہیں، تو وہ ابتدائی چند دنوں میں بہت زیادہ درد محسوس کرتے ہیں۔ جس سے وہ پورے گھر کو اپنے سر پر رکھتا ہے۔ اس وقت انہیں درد سے نجات دلانا بہت ضروری ہے۔ تو آئیے جانتے ہیں کہ آپ دانت نکالنے کے وقت بچوں میں ہونے والے درد سے کیسے نجات پا سکتے ہیں اور اس وقت کیا احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں۔

بچوں کے داڑھ کی علامات اور وقت.(Symptoms and timing of children’s molars)

بچوں کے پیچھے دو داڑھ ہوتے ہیں جب وہ ایک سال یا 16 ماہ کے ہوتے ہیں اور دوسرا جوڑا جب وہ 20 سے 30 ماہ کے ہوتے ہیں۔ اس دوران بچوں میں درج ذیل علامات ظاہر ہو سکتی ہیں۔

  • اس عمل میں بچہ دانت میں درد کی وجہ سے چڑچڑا ہو جاتا ہے اور رونے لگتا ہے۔
  • زیادہ تھوک پیدا ہونے کی وجہ سے تھوک بہنا شروع ہو جاتا ہے۔
    ہلکا بخار۔
  • انگلیوں یا کپڑوں کو ہر وقت چباتے رہیں تاکہ ان کی زبان زیادہ کام کرے۔
  • درد کی وجہ سے اچھی طرح سے سونے سے قاصر۔
  • مسوڑھوں میں لالی اور درد۔

یہ بھی پڑھیں: طاقت کے لیے بچوں کو کیا کھلایا جائے؟ ماہرین سے 5 چیزیں سیکھیں، جو طاقت میں اضافہ کرتی ہیں۔

بچوں میں درد کو کیسے دور کیا جائے.(How to relieve pain in children)

کچھ بچوں کے دانت آنے پر زیادہ درد محسوس نہیں ہوتا۔ لیکن کچھ بچے بہت زیادہ درد میں ہوتے ہیں اور وہ کسی بھی وقت رونا نہیں روک سکتے۔ اس صورت حال میں آپ ان کے مسوڑھوں کو نرم کپڑے یا صاف انگلی سے رگڑ سکتے ہیں۔ ان کے مسوڑھوں پر ٹھنڈا چمچ رکھیں۔ ربڑ کے دانتوں کی انگوٹھیاں استعمال کی جا سکتی ہیں۔

  • اگر دو سال کے بچے کے دانت نکل رہے ہیں تو یہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔
  • جب بھی آپ دودھ پلائیں بچے کے منہ کو اچھی طرح صاف کریں۔ تاکہ بیکٹیریا اس جگہ جمع نہ ہو سکیں اور انہیں دانتوں کے ڈی کے یا دانتوں کے گرنے جیسی صورتحال کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
  • ان کے دانت صاف کرنے کے لیے انتہائی نرم برش کا استعمال کریں اور دانتوں کے چاروں طرف گول برش کو گھما کر اپنے دانت صاف کریں۔
  • آگے اور پیچھے کی سمت میں برش نہ کریں۔ ایسا کرنے سے ان کے مسوڑھوں میں بہت زیادہ درد ہو سکتا ہے۔
    اگر بچے کی عمر تین سال سے کم ہے تو ٹوتھ پیسٹ صرف ایک مٹر یا اناج کے دانے کی مقدار میں لیں۔ اس صورت حال میں فلوریڈیٹڈ ٹوتھ پیسٹ ایک اچھا آپشن ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں: کیا پروٹین پاؤڈر بچوں کے لیے محفوظ ہے؟ ماہرین سے اس کے فوائد، نقصانات اور بچوں کے لیے احتیاطی تدابیر جانیں۔

when do babies get all molars their molars in urdu

اگر بچے کے دانت آ رہے ہوں تو یہ چیزیں نہ دیں۔(If baby teeth are coming then do not give these things)

  • اگر آپ کے بچے کے دانت نکل رہے ہیں تو اسے درج ذیل چیزیں کھانے کی اجازت نہ دیں۔
  • بہت زیادہ میٹھی اشیاء، خاص طور پر پیک شدہ کھانے جیسے جوس اور چاکلیٹ۔
  • نمکین یا ٹھوس کھانا جو دانتوں سے چپک سکتا ہے۔
  • ان کے پہلے دانت آنے کے بعد انہیں رات کو کثرت سے دودھ نہ پلائیں۔
  • کچھ کریمیں، جیلیں، اور حالات کے درد سے نجات دہندہ بھی بڑی مقدار میں نہیں دی جانی چاہیے۔

دانت آنے پر بچوں کے مسوڑھوں میں درد ہونا بہت عام سی بات ہے لیکن آج کے ٹپس پر عمل کرکے آپ انہیں کچھ آرام دے سکتے ہیں۔ لیکن اگر آپ کے بچے میں اس وقت اسہال، خارش یا تیز بخار جیسی علامات ہیں، تو آپ انہیں ڈاکٹر کے پاس لے جائیں۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button