صحت کا دیسی علاج

ویٹ مینیجمنٹ: پیٹ کی چربی کیوں بڑھتی ہے؟ 5 وجوہات جانیں۔

پیٹ کی چربی بڑھانے کی ان وجوہات کے بارے میں جاننا بہت ضروری ہے، ورنہ آپ اپنی بڑھتی ہوئی پیٹ کی چربی کو آسانی سے کنٹرول نہیں کر پائیں گے۔

لوگ اکثر پیٹ کی چربی بڑھنے سے پریشان رہتے ہیں۔ لیکن کیا آپ نے کبھی سوچا ہے کہ ہمیشہ پیٹ کے گرد چربی کیوں بڑھتی ہے. (پیٹ کی چربی کی وجوہات)؟ دراصل ہمارے جسم میں چربی کی دو قسمیں ہوتی ہیں، پہلی جلد کے نیچے کی چربی جسے subcutaneous fat کہتے ہیں اور دوسری visceral fat۔ پیٹ کی چربی وہ بنیادی چربی ہے جو ہماری جلد کے اندر بڑھتی ہے۔ یہ چربی سب سے تیز اور سب سے زیادہ بڑھتی ہے۔ اس چربی میں اضافے کے پیچھے طرز زندگی، جسمانی سرگرمی اور خوراک سے متعلق کئی وجوہات ہیں۔ تو آئیے جانتے ہیں پیٹ کی چربی بڑھانے کی وجوہات اور پھر ان وجوہات سے بچنے اور اسے کم کرنے کا طریقہ جانتے ہیں۔

 

آپ کے پیٹ کے گرد چربی ہمیشہ کیوں جمع ہوتی ہے؟(Why does fat always accumulate around your abdomen)

پیٹ میں چربی کا جمع ہونا ہمیشہ نقصان دہ نہیں ہوتا۔ دراصل، پیٹ کی چربی ایک طریقہ ہے جس سے آپ کا جسم توانائی کو ذخیرہ کرتا ہے۔ یہ آپ کے پٹھوں اور ہڈیوں کو آرام دہ پیڈنگ فراہم کرنے کے لیے کام کرتا ہے۔ یہ آپ کی جلد اور آپ کے پٹھوں کے درمیان اعصاب اور خون کی نالیوں کے لیے راستے کے طور پر کام کرتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ ڈرمیس کو پٹھوں اور ہڈیوں سے اس کے خصوصی جڑنے والے ٹشو سے جوڑتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ آپ کے جسم کے درجہ حرارت کو کنٹرول کرنے میں بھی مدد کرتا ہے کیونکہ چربی جسم کو موصل بناتی ہے، درجہ حرارت کو کنٹرول کرنے میں مدد دیتی ہے۔ پیٹ کی چربی کئی وجوہات کی وجہ سے بڑھ جاتی ہے۔ 

1. بیہودہ طرز زندگی.(Vain lifestyle)

بیٹھے رہنے والے طرز زندگی کے دوران جس میں آپ زیادہ تر بیٹھے رہتے ہیں، پیٹ کی چربی تیزی سے بڑھ جاتی ہے۔ بیٹھے ہوئے طرز زندگی کے ساتھ، آپ جو کچھ کھاتے ہیں وہ اسٹوریج روم میں محفوظ ہو جاتا ہے۔ آپ جتنا زیادہ کھاتے ہیں، آپ کے پیٹ کی چربی اتنی ہی تیزی سے بڑھتی ہے۔ لیکن اگر آپ محنت نہیں کر رہے یا اسے ہضم کرنے کے لیے اتنا پسینہ نہیں بہا رہے ہیں تو یہ چربی جمع ہو جاتی ہے اور ایک دن یہ پیٹ کی بھاری چربی کی شکل اختیار کر لیتی ہے۔ کے خلاف حفاظت کرنے کے لئے

 

2. ہارمونل تبدیلیوں کی وجہ سے.(Due to hormonal changes)

ہارمونز جسم میں چربی کی تقسیم کا تعین کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ ہارمونل عدم توازن بھوک میں اضافہ، میٹابولزم کی رفتار اور تناؤ کی سطح میں اضافے کا باعث بن سکتا ہے، جو پیٹ کی چربی کے جمع ہونے کا باعث بن سکتا ہے۔ اس کے علاوہ، یہ میٹابولزم کو اتنا سست کر دیتا ہے کہ آپ کے لیے چربی کم کرنا مشکل ہو جاتا ہے۔ اس لیے پیٹ کی چربی کو کم کرنے کے لیے ضروری ہے۔

3. تناؤ کی وجہ سے.(Due to stress)

موٹاپے اور تناؤ کے درمیان ہمیشہ سے تعلق رہا ہے۔ درحقیقت، تناؤ اعلیٰ کورٹیسول کی سطح کو متحرک کرتا ہے اور آپ کو کھانے کی خواہش کرتا ہے۔ اس کی وجہ سے آپ زیادہ کھانا کھاتے ہیں اور یہ پیٹ کی چربی میں اضافے کا سبب بنتا ہے۔ اس لیے اگر آپ پیٹ کم کرنا چاہتے ہیں تو تناؤ سے پاک رہیں۔ اس سے میٹابولزم تیز ہوگا، کھانا صحیح ہضم ہوگا اور جسم میں چربی جمع نہیں ہوگی۔ اس کے علاوہ تناؤ نیند کی کمی کا باعث بھی بن سکتا ہے جس سے تناؤ کے ہارمونز بڑھتے ہیں اور پیٹ میں چربی بڑھ جاتی ہے۔

4. شراب پینے سے.(By drinking alcohol)

شراب شوگر بڑھانے کا کام کرتی ہے۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ ہمارا جسم اسے چینی کی شکل میں توڑتا ہے اور پھر یہ اضافی چربی میں تبدیل ہو جاتا ہے۔ الکحل کی یہ اضافی چینی بھی اپھارہ اور پیٹ کے موٹاپے کا باعث بن سکتی ہے۔ اس لیے بہت زیادہ شراب پینے سے گریز کریں۔

 

یہ بھی پڑھیں: صبح خالی پیٹ کلونجی کھانے سے یہ 10 فائدے ملتے ہیں، ماہرین سے جانیے کھانے کا طریقہ

5. ناقص خوراک کی وجہ سے.(Due to poor diet)

صحیح خوراک آپ کو پیٹ کی چربی کو کنٹرول کرنے میں مدد دے سکتی ہے۔ اس لیے سب سے پہلے آپ کو چاہیے کہ اپنی خوراک سے ٹرانس فیٹ نکال دیں۔ دوسرا، زیادہ پروٹین والی خوراک کا استعمال کرنا چاہیے اور کم فائبر والی غذاؤں سے پرہیز کرنا چاہیے۔ دراصل، ٹرانس چربی غیر صحت بخش چربی ہیں جو پراسیس شدہ اور تلی ہوئی کھانوں میں پائی جاتی ہیں۔ وہ پیٹ کے علاقے میں چربی جمع کرتے ہیں اور چربی کے تحول کو سست کرتے ہیں۔ کم فائبر والی غذائیں میٹابولزم کو سست کرتی ہیں، جس سے کیلوریز جلانا مشکل ہوجاتا ہے، اس لیے زیادہ فائبر والی غذائیں کھائیں۔ اس کے علاوہ خوراک میں پروٹین کی مقدار بڑھائیں جو کہ ہارمونز کی صحت اور بھوک کو کنٹرول کرنے میں مدد دیتا ہے۔

اس کے علاوہ میٹھے کھانے اور مشروبات سے پرہیز کریں۔ اس میں ایڈیٹیو، پرزرویٹیو اور مصنوعی رنگ ہوتے ہیں، جو پیٹ کی چربی بڑھانے کا کام کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ پیٹ کی چربی کو کم کرنے کے لیے روزانہ 40 منٹ ورزش کریں اور دن بھر جسمانی طور پر متحرک رہنے کی کوشش کریں۔

Aarif Rao

Arif Rao is a Herbalist, Blogger, Writer, YouTuber, and Digital Content Creator who is helping people by solving their problems and making them physically stable.

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button